Monday

Dar O Deewar Ki Zanjeer Se Aazad Ho Jana


Roman Urdu   رومن اردو

Dar O Deewar Ki Zanjeer Sey Aazad Ho Jana
Jannoon Ab Chahta Hai Dasht Mein Abad Ho Jana

Nai Deewangi hai Aik Din Khood Hee Samjh Ley Gee
Bahot Aasan Nahin Hai Ishq Mein Farhad Ho Jana

Mohabbat Khoob Yeh Anjam Hai Ahl e Mohabbat Ka
Tujhey Aabad Karna Aor Khood Barbaad Ho Jana

Azzal Se Dill Ki Basti Ka Yahi Maamool Hai Shaid
Kabhi Weeran Ho Jana Kabhi Aabad Ho Jana

Hamara Haq Tallab Karna Tujhey Acha Nahin Lagta
Hamein Aata Nahin Hai Kaasa e Faryad Ho Jana

Sitam K Moujjadon Ko Kion Bhalla Hairan Karta Hai
Kissi Mazloom Ka Ekk Din Sitam Eejad Ho Jana

Marz Apna Purana Hai Achanak Besabab Aalam
Kabhi Dilshad Ho Jana Kabhi Nashad Ho Jana

Urdu    اردو

در و دیوار کی زنجیر سے آزاد ہو جانا
جنوں اب چاہتا ہے دشت میں آباد ہو جانا

نئی دیوانگی ہے ایک دن خود ہی سمجھ لے گی
بہت آساں نہیں ہے عشق میں فرہاد ہو جانا

محبت خوب یہ انجام ہے اہلِ محبت کا
تجھے آباد کرنا اور خود برباد ہو جانا

ازل سے دل کی بستی کا یہی معمول ہے شائد
کبھی ویران ہو جانا کبھی آباد ہوجانا

ہمارا حق طلب کرنا تجھے اچھا نہیں لگتا
ہمیں آتا نہیں ہے کاسہِ فریاد ہو جانا

ستم کے موجدوں کو کیوں بھلا حیران کرتا ہے
کسی مظلوم کا اک دن ستم ایجاد ہو جانا

مرض اپنا پرانا ہے اچانک بے سبب عالم
کبھی دلشاد ہو جاتا کبھی ناشاد ہو جانا


عالم خورشید

No comments:

Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...