Friday

apnay haathoon se yun chehare ko chupaate kion ho mujh se sharmaate

apnay haathoon se yun chehare ko chupaate kion ho
mujh se sharmaate ho to saamane aate kion ho

tum kabhii merii tarah kar bhii lo iqaraar-e-vafaa
piyar karate ho to phir piyar chupaate kion ho

ashk aunkhoon main merii dekh ke rote kion ho
dil bhar aataa hai to phir dil ko dukhaate kion ho

in se vaabastaa hai jab meraa muqaddar phir tum
mere shaanoon se ye zulf hataate kion ho

roz mar mar ke mujhe jeene ko kahte kion ho
milane aate ho to phir laut ke jaate kion ho.

Ratoon ko tere ghar se nikalna nahi bhola patoon ka gahzaan rut me

Raton ko tere ghar se nikalna nhi bhola
patoon ka gahzaan rut main bikhrna nho bhola

sardi main thartahrate howay woh dant tumare
Gabraa ke tera mujh se liptana nho bhola

ana tera milne mujay Nadiya ke kinaare
agaz-e-Mohabbat main jijekana nho bhola

youn mujh se gafar rehna kabhi rothna tera
woh mannnaa Mananaa woh tarpana nhi bholna

mujay Yaad hai sab Pyaar ke lamhe
Bagoon main Bahanoo se woh Milna Nhi Bhoola

Wo Dil Me Basa Kuch Is tarha Mai Sari Duniya Bhulati Rahi Har sans

Wo Dil Mein Basa Kuch Istarha,
Mein Sari Dunya Bhulati Rahi,

Har Sans Mein Uski Khushbo Ati Rahi,
Mein Pal Pal Dil Ko Behlati Rahi,

Kabhi Hans Kar Kabhi Ro Kar,
Mein Mohabbat Ki Galiyon Ko Sajati Rahi,

Har Raat Chand Ko Takti Rahi,
Har Ghari Uska Intezar Karti Rahi,

Har Khushi Mile Usay Zindagi Mein,
Har Pal Ye Dua Karti Rahi,

Na Miley Koi Gham Usay,
Khud Aanhein Bhar Kar Roti Rahi,

Har Din Mein Usko Chahti Rahi,
Har Pal Uski Yaad Ati Rahi,

Har Raat Ko Wo Yaad Ata Raha,
Har Raat Meri Yun Sulagti Rahi,

Kuch Khoyi Uski Baaton Mein Istarha,
Bus Usi Ki Awaz Ko Sunti Rahi,

Usay Har Pal Yaad Rakhnay K Liye,
Bus Usi K Gun Gaati Rahi,

Gumm Huii Us CHAND Mein Yun,
Har Simt Usi Ki Surat Dekhti Rahi,

Bus Kati Meri Zindagi Istarha,
Mein Usi Ki Khatir Jeeti Rahi,

Wo DIL Mein Basa Kuch Istarha,
Mein Sari Dunya Bhulate Rahi……

kaisa lagta hai khirki se barish ki bonde takna apne ap ko in bondoon ki

kasa lagta ha

khirkhi se barish ki bonde takna

apne ap ko in bondoon ki nazar kerna

kasa lagta ha

jb bijli zor se karak ker apne guse ka izhar kerte ha

or jwab main badal hans ker use manata ha

in ahsasat main jeena

kasa lagta ha

bolo kasa lagta ha

barish ka sang ankh macholi khalna

kasa lagta ha

Dil Ne Tnaha Jhaili Raat Hijr Ki Raat Sahaili Raat Din Waley Kab

Dil Ney Tnaha Jhaili Raat
Hijr Ke Raat, Sahaili Raat

Dinn Waley Kub Booj Sakkay
Mushkil Shaam Pahaili Raat

Ikk Safa Ke Tashreehien! !
Chand,chakkor,chanbaili,raat

Din Apney Har Dad Ka Dost
Iss Ke Aik Sahaili Raat

Ikk Sunsan Nagar Har Saans
Ikk Veraan Hawaili Raat

Iss Ka Roop " Harr " Ke Dhoop
Meri Sad Hathaili Raat

Iss Ke Aankh Se Chhalke Sham
Uss Ke Zulf Se Khaili Raat

Muhsin K Anjaam K Naam! !
Hijr Ke Nae Nawaili Raat

Ab tek terey fitney hain salamat Usay Kehna yawar sar-e-mehshar bi

ab tak terey fitney hen salamat, usey kehna.
yawar! sar-e-mehshar b qayamat usay kehna.

aey hum-nafaso! mehw-e-ghum-e-jaan hen abi tak.
aen ge sar-e-koo-e-malamat usay kehna

ik wo hi nahi tark-e-ta’alluq pe pasheman.
he ahl-e-wafa ko b nadamat usay kehna

aey dil-zadgaan! maut he izhar-e-tamanna.
wo but ho khuda b to khuda mat usay kehna

har-chund faraz in dino ma’atoob he phir b
 halaat ka mara he, bura bat usay kehna

Dagh-e-Dil Hum ko yaad ane lage Log apne diye jalaane lage Kuch na

Daagh-e-Dil Hum ko yaad ane lage
Logg apne diye jalaane lage

Kuch na paa kar bhi mutma’en hain Hum
Ishq mein haath kya khazaane lage

yehi rasta hai ab yehi manzil
ab yehein dil kisi bahane lage

Khud fareybi si Khud fareybi hai
Paas k dhol bhi suhaane lage

Ab to hota hai har qadam pe gumaan
Hum ye kysa qadam uthaane lage

Is badalte hue zamaney mein
Tere qissey bhi kuch puraane lage

Rukh badalne laga fasaane ka
Logg mehfil se uth k jaane lage

Ek pal mein hum wahan se uthe
Baithne mein jahan zamaane lage

Apni kismat se hai mufer kis ko?
Teer par urr k bhi nishaane lage

Hum taka aye, na aaye mousam-e-gul
Kuch parinde to chehchahaane lage

Shaam ka waqt ho gaya Baaqi’...!
Bastiyon se sharaar aane lage...'

Daagh-e-Dil Hum ko yaad ane lage
Logg apne diye jalaane lage

henna---261,270













Janta Hai Koi Kya

Raat Ki Tanhayi Mein

 Un Aahaton Ki Kashmakash,

Kaisi Ajeeb Hoti Hai 

In Karwaton Ki Kashmakash,

Har AnjuMan Adhura Hai, 

Har Mehfil Akeli Hai,

Deedar Ko Tarasti,

In Chaukhaton Ki Kashmakash,

Na Thikana Hai Koi Bhi

 Zinda Lashon Ke Liye,

Yehi Hai Sisakte Sunkate

 Marghaton Ki Kashmakash,

Kayi Gehre Sawalon Ka

 Karwan Ho Jaise Koi,

Yun Meri Peshani Pe 

Salwaton Ki Kashmakash,

Haadse To Sabhi Ne

 Dekhe Honge Sadkon Par,

Janta Hai Koi Kya, 

JaM Ghaton Ki Kashmakash...

دھیرے دھیرے جی اُٹھنا


یکدم مرنا
دھیرے دھیرے جی اُٹھنا
جی اُٹھنا اور اپنے کانپتے ھاتھوں سے
اپنے ھی دروازے پر دستک دینا
بوجھل آنکھ سے دروازے پر
اپنے نام کی تختی پڑھنا
پھر کچھ سوچ کے اپنے ڈولتے قدموں سے
اور کِسی دروازے کی جانب بڑھنا
پھر کچھ سوچ کے رُک جانا
کیسا انوکھا کھیل ھمارے ھاتھ لگا ھے
یکدم مرنا
دھیرے دھیرے جی اُٹھنا



ab hamain baikaar ki baatein

Agar karnii hoon to phir Aa,
karain hum piyaar ki baatein
wagarna choR dai
 baaqii hain sub baikaar ki baatein

buraa ho ya bhla 
koii kisi se kya gharaz hum ko
kya apnoon ki kamii he
 jo karein aghyaar ki baatein

lagaayaa dil agar hum ne,
zamaana kya kahaiga phir
ye sub hain baad ki 
ab to na kar baikaar ki baatein

yahaan par to sunaa he ke
 hote hain kaaN diwaaroun ke
kisi ke saamne 
kaise karein asraar ki baatein

ye qol o fail main janaan he 
kuon itnaa tazaad aakhir
kisi se pyaar karta he 
kisi se pyaar ki baatein

teri nazroun main jab se 
pyaar ki daikhi jhalak hum ne
burii lagtii nahein hain 
ab hamain baikaar ki baatein

" کہتے ہیں کہ ایک چھوٹی مچھلی نے بڑی مچھلی سے پوچھا

" کہتے ہیں کہ ایک چھوٹی مچھلی نے بڑی مچھلی سے پوچھا

" آپا یہ سمندر کہاں ہوتا ہے ؟“

اُس نے کہا جہاں تم کھڑی ہوئی ہو یہ سمندر ہے-

اُس نے کہا، آپ نے بھی وہی جاہلوں والی بات کی۔ یہ تو پانی ہے، میں تو سمندر کی تلاش میں ہوں اور میں سمجھتی تھی کہ آپ بڑی عمر کی ہیں، آپ نے بڑا وقت گزارا ہے، آپ مجھے سمندر کا بتائیں گی-

وہ اُس کو آوازیں دیتی رہی کہ چھوٹی مچھلی ٹھہرو،ٹھہرو میری بات سُن کے جاؤ اور سمجھو کہ میں کیا کہنا چاہتی ہوں لیکن اُس نے پلٹ کر نہیں دیکھا اور چلی گئی-

بڑی مچھلی نے کہا کہ کوشش کرنے کی، جدّوجہد کرنے کی، بھاگنے دوڑنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے، دیکھنے کی اور Straight آنکھوں کے ساتھ دیکھنے کی ضرورت ہے- مسئلے کے اندر اُترنے کی ضرورت ہے- جب تک تم مسئلے کے اندر اُتر کر نہیں دیکھو گے، تم اسی طرح بے چین و بےقرار رہو گےاور تمہیں سمندر نہیں ملے گا-

میرے "بابا“ نے کہا یہ بڑی غور طلب بات ہے- جو شخص بھی گول چکروں میں گھومتا ہے اور اپنے ایک ہی خیال کے اندر”وسِ گھولتا“ہے اور جو گول گول چکر لگاتا رہتا ہے، وہ کُفر کرتا ہے، شِرک کرتا ہے کیونکہ وہ اِھدِناالصّراطَ المُستَقیم (دکھا ہم کو سیدھا راستہ) پر عمل نہیں کرتا- یہ سیدھا راستہ آپ کو ہر طرح کے مسئلے سے نکالتا ہے لیکن میں کہتا ہوں سر اس” دُبدا“ (مسئلے) سے نکلنے کی آرزو بھی ہےاور اس بے چینی اور پیچیدگی سے نکلنے کو جی بھی نہیں چاہتا، ہم کیا کریں- ہم کچھ اس طرح سے اس کے اندر گِھرے ہوئے ہوتے ہیں، ہم یہ آرزو کرتے ہیں اور ہماری تمنّا یہ ہے کہ ہم سب حالات کو سمجھتے جانتے، پہچانتے ہوئے کسی نہ کسی طرح سے کوئی ایسا راستہ کوئی ایسا دروازہ ڈھونڈ نکالیں، جس سے ٹھنڈی ہوا آتی ہو- یا ہم باہر نکلیں یا ہوا کو اندر آنے دیں، لیکن یہ ہمارے مقدّر میں آتا نہیں ہے- اس لیے کہ ہمارے اور Desire کے درمیان ایک عجیب طرح کا رشتہ ہے جسے بابا بدھا یہ کہتا ہے کہ جب تک خواہش اندر سے نہیں نکلے گی (چاہے اچھی کیوں نہ ہو) اُس وقت تک دل بے چین رہے گا- جب انسان اس خواہش کو ڈھیلا چھوڑ دے گا اور کہے گا کہ جو بھی راستہ ہے، جو بھی طے کیا گیا ہے میں اُس کی طرف چلتا چلا جاؤں گا، چاہے ایسی خواہش ہی کیوں نہ ہو کہ میں ایک اچھا رائٹر یا پینٹر بن جاؤں یا میں ایک اچھا” اچھا“ بن جاؤں- جب انسان خواہش کی شدّت کو ڈھیلا چھوڑ کر بغیر کوئی اعلان کئے بغیر خط کشیدہ کئے یا لائن کھینچے چلتا جائے تو پھر آسانی ملے گی ۔"

اشفاق احمد ( زاويه دوم )

خود کو گم کر دینے کے لئے

لیلۃ القدر کی حقیقت سمجھ نہیں آتی _____

سوال:
لیلۃ القدر کی حقیقت سمجھ نہیں آتی _____
جواب:
ہاں یہ ہے انا انزلنٰہ ہم نے اسے نازل فرمایا فی لیلۃ القدر قدر کی رات میں۔ اب وہ رات گز ر گئی ہے۔ کسی رات کی یاد کوئی اور رات نہیں ہے۔وہ رات اس لیے مقدس ہے کہ اُس رات میں قرآن نازل ہوا۔ قرآن نازل ہونے کے بعد وہ رات آج کی رات نہیں ہے۔
سوال:
قرآن ایک رات میں تو نازل نہیں ہو ابلکہ وہ تو کافی عرصہ نازل ہوتا رہا۔
جواب:
اسے منسوب کر دیا گیا کہ اس ایک مقام پر قرآن کریم آیا تھا‘ پھر اُس کے بعد ترسیل ہوتی رہی ۔ وہ ایک رات ہے جسے ہم اپنے رمضان شریف میں کہتے ہیں کہ یہ رات جو ہے یہ لیلۃ القدر ہے‘ یہ بتانے کے لیے ہے تاکہ آپ کو عبادت کا موقع ملے‘ عبادت کی چاشنی ہو‘ اﷲ کے تقرب کو حاصل کرو ورنہ تو اﷲ کی طرف سفر کرنے والے کے لیے ہر رات ہی لیلۃ القدر ہے۔ جس نے قرآن نہیں پڑھا اُس کو قرآن نازل ہونے کی اہمیت کا کیا پتہ چلے گا۔ لہٰذا اگر قرآن پڑھا نہیں ہے ‘ قرآن سمجھا نہیں ہے اور کہہ رہاہے کہ آج رات قرآن نازل ہوا تھا تو اسے قرآن کا کیا پتہ ۔ جس نے قرآن پڑھنا نہیں ہے تو اسے قرآن کے نزول کی برکت کیا ہوگی۔اس لیے اپنا عمل درست کرو تو سارا واقعہ یہیں ہو جائے گا‘یہیں آپ کے اندر قاب قوسین کی سمجھ آجائے گی‘ یہیں جبریل سمجھ آجائے گا‘ یہیں ناسوت ہے‘ یہیں ملکوت ہے‘ لاہوت ہے اور ہاہوت ہے۔ ناسوت کیا ہوتا ہے؟یعنی انسانی وجود میں‘وجود کی جو خواہشات ہیں یہ سب ناسوت ہوتی ہیں اور آپ کی فرشتوں جیسی جوصفات ہیں یہ ملکوتی ہیں اور جب آپ الٰہیات کی طرف نکل جائیں تو پھر وہ لاہوت آگیا۔ وہاں فرشتہ بھی ختم ہوجاتا ہے اور انسان بھی ختم ہوجاتا ہے‘صرف اﷲ کی ذات ہے اور ’’تو ہی تو ہے‘‘۔ تویہ ایک مقام آگیا۔ پھر ایک اور مقام آتا ہے جو بزرگوں نے بتایا ہوا ہے‘کبھی اﷲ چھپ جاتا ہے اور انسان ڈھونڈتا ہے اور کبھی انسان کہتا ہے کہ میں چھپ رہاہوں تو تُو ڈھونڈ‘ پھر انسان کہتا ہے کہ ہم دعا کرتے کرتے تھک گئے ہیں‘ اب ہم نے دعا نہیں کرنی‘ تیری مرضی ہے دے یا نہ دے۔ تب اﷲ دے دیتا ہے۔ کب دیتا ہے؟ جب تم گلے سے بالکل نکل جاتے ہو۔ اﷲ کے ساتھ دوستی میں یہ واقعہ ہو سکتا ہے۔ انسان کہتا ہے کہ اب ہم نے آپ سے کیا لینا ہے اور کیا مانگنا ہے کیونکہ ہمارے پاس آپ کے محبوب کی محبت ہے‘ اب تو خود ہی دیتا جائے گا۔ یہ کبھی کبھی ہوتا ہے تاکہ یہ بے باکی کہیں گستاخی نہ بن جائے۔ اگر آپ کو پوری جان دینے کا عمل نہیں آیا تو اﷲ سے بے تکلفی جو ہے یہ گستاخی ہے۔ اگر آپ نے جان دینی ہے اور اس کا پورا حکم مانناہے تو پھر آپ یہ بات کہہ سکتے ہیں۔
سوال:
یہ تو بہت مشکل ہے۔
جواب:
اگر مشکل ہے تو پھر آپ بچے رہو۔ آپ کے لیے عبادت ہی کافی ہے۔
(حضرت واصف علی واصف رحمۃ اللہ علیہ)

اللہ جس کو اپنی یاد دلانا چاہتا ہے

ایک مارکیٹ میں دکاندار

Wo Samajhti Hai

Wo Samajhti Hai K Har Shakhs Badal Jata Hai,

Usay Lagta Hai Zamana Usi K Jeisa Hai......

henna---271


اللہم اجرنی من النار

لا حول ولا قوۃ الا باللہ… فضائل

سلطان محمود غزنوی رحمتہ اللہ علیہ کے مصاحبین نے انہیں یہ شکایت لگائی کہ بادشاہ سلامت ایاز کی ایک الماری

سلطان محمود غزنوی رحمتہ اللہ علیہ کے مصاحبین نے انہیں یہ شکایت لگائی کہ بادشاہ سلامت ایاز کی ایک الماری ہے یہ اس الماری کو تالا لگا کر رکھتا ہے وہ روزانہ اس الماری کو کھول کر دیکھتا ہے اور کسی دوسرے بندے کو دیکھنے نہیں دیتا ہمارا خیال ہے کہ اس نے آپ کے خزانے کے قیمتی ہیرے اور موتی اس کے اندر چھپا کر رکھے ہوئے ہیں آپ ذرا اس کی تلاشی لیجیے جب بادشاہ کو یہ شکایت لگائی گئی تو بادشاہ سلامت نے اسی وقت ایاز کو بلوایا اور کہا ایاز کیا تمہاری الماری ہے اس نے کہا جی ہے پوچھا کیا اسے تالا لگا کر رکھتے ہو اس نے کہا جی ہاں پوچھا کسی اور کو دیکھنے دیتے ہو عرض کیا جی نہیں پھر پوچھا کیا تم خود اسے روزانہ دیکھتے ہو عرض کیا جی ہاں پھر بادشاہ نے فرمایا کہ چابی لاؤ ایاز نے چابی دے دی بادشاہ نے کسی بندے کو بھیجا کہ جاؤ اس الماری میں جو کچھ موجود ہے وہ لا کر یہاں سب کے سامنے پیش کر دو وہ حاسدین بڑے خوش ہوئے کہ دیکھو اب اس کی حقیقت کھل جائے گی جب اس کی چوری کا سامان سامنے آئے گا تو بادشاہ ابھی اس کو یہاں سے دھکے دے کر نکال دے گا اللہ کی شان کہ جب وہ بندہ واپس آیا تو اس نے آکر بادشاہ کے سامنے تین چیزیں رکھ دیں ایک پرانا جوتا اور پرانا تہبند اور ایک پرانا کرتا بادشاہ نے پوچھا اس میں کچھ اور نہیں تھا اس نے کہا جی نہیں یہی کچھ تھا بادشاہ نے کہا ایاز اس میں تو کوئی ایسی قیمتی چیز نہیں ہے جسے تم تالے میں بند کر کے رکھو اور کسی دوسرے کو دیکھنے بھی نہ دو اور کوئی ایسی چیز بھی نہیں کہ جسے تم روزانہ آکر دیکھو کرو کہ ٹھیک ہے یا نہیں اس نے کہا بادشاہ سلامت بات یہ ہے کہ میرے نزدیک یہ بہت قیمتی ہیں بادشاہ نے پوچھا بھئی وہ کیسے اس نے کہا بادشاہ سلامت وہ اس لیے کہ جب میں آپ کے دربار میں پہلی مرتبہ آیا تھا تو یہ جوتے پہنے ہوئے تھے یہ تہبند باندھا ہوا تھا اور کرتا پہنا ہوا تھا میں نے ان تینوں چیزوں کو محفوظ کر لیا تھا اب میں روزانہ الماری کھول کر ان کو دیکھتا ہوں اور اپنے نفس کو سمجھاتا ہوں کہ ایاز تمہاری اوقات یہی تھی تم اپنی نہ بھولنا اب تمہیں جو کچھ ملا ہے یہ سب تمہاری بادشاہ کا تم پر احسان ہے لہٰزا تم اپنے بادشاہ سلامت کا احسان سامنے رکھنا بادشاہ سلامت اس طرح مجھے اپنی اوقات یاد رہتی ہے کہ میں کیا تھا اور مجھے بادشاہ کے قرب نے کیا کیا عزتیں بخشیں

Gk--1


-- بندرجگنو کے قریب نہیں جاتے کیونکہ وہ انہیں آگ کا شعلہ سمجھتے ہیں۔


-- کتے کوجسم کی بجائے زبان پرپسینہ آتاہے۔ کتے کو گھی ہضم نہیں ہوتا۔

-- ہاتھی اور گھوڑا کھڑے کھڑے سوجاتے ہیں۔

-- مچھلی کی آنکھیں اس لیے کھلی رہتی ہیں کیونکہ اس کے پپوٹے نہیں ہوتے۔

-- کیکڑے کے دانت پیٹ میں ہوتے ہیں۔

-- کچوے میں پھیپھڑے نہیں ہوتے یہ جلد کے ذریعے سانس لیتاہے۔

-- ڈولفن میں آواز سننے کی حس کتے سے تین گنا اور انسان سے پانچ گنازیادہ ہوتی ہے۔

-- ڈولفن آواز سننے کے لیے اپنے جبڑے استعمال کرتی ہے۔

-- برفانی چیتا اتناطاقتور ہوتاہے کہ اپنے وزن سے تین گنا زیادہ اٹھاسکتاہے۔

-- ایک چھوٹے پرندے کی نبض کی رفتاتقریباً500 دفعہ فی منٹ ہے۔

-- ہمارے جسم چھوٹی بڑی تقریباً 206 ہڈیاں ہیں۔

-- ایک صحت مند انسان کی نبض کی رفتارتقریباً 70 دفعہ فی منٹ ہے

ﮨﯿﺜﻢ ﺑﻦ ﻋﺪﯼ ﮐﮩﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﺗﯿﻦ ﺍﻓﺮﺍﺩ ﮐﺎ ﺑﯿﺖ ﺍﻟﻠﮧ ﻣﯿﮟ

اللہ تعالی کے نام

موت کی نشانیاں

mujhse pyaar nahi katri

"KYA KAHOON,
AB OR KUCH NAHI KEHNA"

"Sogai ho kya,
Jo jawab nahi deti,
Uth gai ho kya ,
Jo sawal nahi karti,
Kuch to kaho 
or bolo mujhse,
Kya tum ab
 mujhse pyaar nahi katri"



Ajab taqazay hain chahtoon k Bari kathin ye musaf-Tein hain

Ajab taqazay hain chahtoon kay
Bari kaathin ye musaaftein hain
Main jis ki raahon mein bicch gaya hoon
Ussi ko mujhse shikayatein hain
Shikayatein sab baja hain lekin
Main kaise uss ko yaqeen dilaon?
Jo mujh ko jaan sey azeez'tar hai
Usse bhulaon tu marr na jaon!
Main iss khamoshi kay imtehaan mein
Kahan kahan sey guzar gaya hoon
usse toh shayad khabar nahin hai
Main dheerey dheerey bikhar gaya hoon!!!!

Ankhoon Me Nami Ka Raaz Rakhta Hoon Mai Tanhaiyon Se Dosti Ka

Ankhoon Mein Nami Ka Raaz Rakhta Hoon
Mein Tanhaiyon Se Dosti Ka Jawaz Rakhta Hoon

Woh Ager Chaly Mere Sath Do Qadam
Phir Dekho Mein Kesi Perwaaz Rakhta Hoon

Aaina Chor Meri Ankhoon Mein Jaahank Zara
In Bestion Mein Sirf Tere Hi Naaz Rakhta Hoon

Khawahishon Pe Daal Rakhi Hai Kamand Sabr Ki
Dabaa Ke Dil Mein Jazboon Ki Awaaz Rakhta Hoon

Ajnabi Shehar K Ajnabi Rastey Meri Tanhayi Per Muskuratey Rahe

Ajnabi shehar kay ajnabi rastey
meri tanhayi per muskuratey rahe

Main bohut dair tak yunhi chalta raha
Tum bohut dair tak yaad atay rahe

Zehar milta raha, zehar peetey rahe
Roz marte rahe, roz jeetey rahe

Zindagi bhi humein azmati rahi
Aur hum bhi issey azmatey rahe

Zakham jab bhi zehan-o-dil per laga
Zindagi ki taraf ik dareecha khula

Hum hi goya kisi saaz ki taar hain
Chaut khatey rahe, gungunatey rahe

Kal kuch aisa huwa, main bohut thak gaya
Iss liye sun kay bhi un'suni kar gaya

Kitni yaadon kay bhatkey huwe karvaan
Dil kay zakhmoon kay dar khatkhatey rahe

Daher me naqsh-e-wafa wajah-e-tasalli na huwa Hai ye woh lafz k

Daher mein,naqsh-e-wafa wajah-e-tasalli na hua
Hai ye woh lafz k sharmindah-e-maani na hua

Mein ne chaha tha k anduah-e-wafa se chutun
Woh sitamger mere marne pe bhi raazi na hua

Dil guzar gaahe khyaal-e-ma'e-o-saghar hi sahi
Ger nafas jaadah'e sir'e -manzil-e-taquwa na hua

Kis se mahroomi-e-kismat ki shikayat kijye
Hum ne chaha tha k mer jayen,so woh bhi na hua

Mer gaya sadma-e-yak jumbish-e-lab se 'Ghalib'
Natawani se hareef-e-dam-e-eisa na hua

Kehne ko ek ainaa toota bikher gaya Lekin mere wajood ko kirchiyon

Kehne ko ik ainaa toota..bikher gaya!
Lekin mere wujood ko kirchiyon se bhar gaya

Main tu kissi khayal kay tanha safar mein tha
Phir kyun laga, qareeb se koi guzar gaya

Ik aashna se dard ne chonkaa diya mujhe
Main tu samanjh raha tha mera zakham bhar gaya

Shayed kay intezaar issi pal ka tha ousse
Kashti kay doobtey hi woh dariya utar gaya

Muddat se ous ki chhaon mein betha nahin koi
Woh saya'daar pairr issi gham main marr gaya

Shayed tamaam nisbatein ous ko mujhi se thiin
Apni har aik yaad mere naam kar gaya

Ik aur shaam dhal gayi sochoon kay dasht mein
Ik aur din bhi khaak urate guzar gaya

Mere hi saath SHAAD safar khatam ho gaya
Main ruk gaya jahan waheen rastaa thehar gaya

Us mod se shuru karen phir yeh zindigi Har sheh jahan haseen thi

Us morr say shuru karain phir yeh zindagi,
Her sheh jahan haseen thi hum tum thay ajnabi.

Lay ker chalay thay hum jinhain jannat ke khuwab thay
Pholoun kay khuwab thay woh mohabbat ke khuwab thay

Laikin kahan hai un may woh pehli si dilkashi ?
Us mor se shuru karain phir yeh zindagi

Rehtay thay hum haseen khayalou ki bheer mein
Uljhay howay hain aaj sawaloun ki bheer mein

Aanay lagi hai yaad woh mohabbat ki her ghari
Us mor say shuru karain phir yeh zindagi

Shayad yeh waqt hum say koi chaal chal gaya
Rishta wafa ka aur he rangoun may dhal gaya

Ashkoun ki chandni say thi behter woh dhoop he
Us mor say shuru karain phir yeh zindagi

Her sheh jahan haseen thi hum tum thay ajnabi.
uss mor se shoro karain phir yeh zindagi

Mera Sochna Teri Zaat Tek Meri Guftago Teri Baat Tak Na Tum Milo

Mera Sochna Teri Zaat Tak
Meri Guftago Teri Baat Tak

Na Tum Milo Jo Kabhi Mujhay
Mera Dhoondna Tujhay Paar Tak

Mane Apna Sab Kuch Ganwa Diya
Teri Nafraton Se Pyaar Tak

Kabhi Fursatain Jo Milain To Aa
Meri Zindagi Ke Hesaar Tak

Main ne Jana Ke Main Kuch Nahe
Tere Pahlay Se Tere Baad Tak....!

Har Rooz bhula detay ho kamal kartay ho hastay ko rulaa detay ho

Har rooz bhula daitay ho kamal kartay ho
hastay ko rulaa daitay ho kamal kartay ho..

Nahi hai mohabbat toh saaf keh do
kyon umeed brhaa daitaay ho kamal kartay ho..

Hum tumhain bholnay lagtay hain jb b
aa kay pyaar jata daitay ho kamal kartay ho

jantay b ho kay aik hi diaa hay mere ghar main
phir b hawa daitay hoo kamal kartaay ho.

Bholnay ka jo mujhay har roz kehtay ho
yun yaad dilaa daitay ho kamal kartay ho

khud hi kehtay ho k nashaa haraam hai
aur jaam thmaa daitay ho kamal kartay ho

kabhi nazren milane me zamane beet jate hain kabhi nazren churane

kabhi nazren milane main zamane beet jate hain
kabhi nazren churane main zamane beet jate hain

kisi ne aankh bhi kholi to sone ki nagriii main
kisi ko ghar banane main zamane beet jate hain

kabhi kali seyah ratain hamain pal pal ki lagti hain
kabhi soraj ko aane main zamane beet jate hain

kabhi khola ghar ka darwaza tu samne thi manzil
kabhi manzil ko pane main zamane beet jate hain

dost lamhon main toot jate hain umer bher ke woh bandhan
woh bandhan jo banane main zamane beet jate hain

Meray wajood ki mujh me talash chor gaya Jo pori na ho kabhi aisi

Meray wajood ki mujh mai talash chhor gaya..
Jo pori na ho kabhi, aisi aas chhor gaya..

Yehi karam nawazi us ki mujh pe kum hai kya..!
K khud to door hai yaadein to paas chhor gaya..

Jo khwahishen thien kabhi, hasraton mai dhal gain ab..
Merey labon pe wo ek lafz "KASH" chhor gaya..

Ye mera zarf hai ek roz us ne mujh se kaha..
"K aam logon mai ek tujh ko KHAS chhor gaya.."

Baharon se mujhay isi liye to nafrat hai..
Inhi ruton mai mujhay wo udaas chhor gaya

Her Kisi Ko Duniya Me Shohratain Nahi Milti Zindigi K Lamhon Ki

Her Kisi Ko Duniya Mein Shuhratain Nahi Milti !!
Zindagi Ke Lamhon Ki Kimatain Nahi Milti !!

Fateh Ki Khwashish Mein Amaal Bhi Tu Lazim Hai !!
Sirf Kuch Iradon Se Musartain Nahi Milti !!

Faiseley Ye Chahat Ke Asamano Pe Hote Hain !!
Do Dilon Ke Milne Se Kismatain Nahi Milti !!

Deen Or Duniya Ko Sath Rakhna Parta Hai !!
Masjadon Mein Rehne Se Janatain Nahi Milti

badalon ka kafila ata hua acha laga pyas ki dharti ko har savan

baadalon kaa kaafilaa aataa huaa acha lagaa
pyaas kii dhartii ko har saavan baDaa acha lagaa

us bharii mahafil mein us kaa chand lamhon ke liye
mujh se milnaa baat karnaa dekhnaa acha lagaa

jin kaa sach honaa kisii suurat se bhii mumkin na thaa
aisii aisii baatein aksar sochnaa achaa lagaa

vo to kyaa aataa magar Khush_fahamiyon ke saath saath
saarii saarii raat ham ko jaagnaa acha lagaa

Ab Aye Meray Ehsaas-e-Junoon Kya Muje Dena Darya Usey Baksha Hai

Ab Aye Meray Ehsaas-e-Junoon, Kya Muje Dena...!!
Daryaa Ussey Baksha Hay Toa Sehra Muje Dena...!!

Tum Makaan Jab Karoo Taqseem Toa Yaroo...!!
Ghirtii Howi dewaar Ka Saya Muje Dena...!!

Jab Waqt Ki Murja'ee Howi Shaakh Sambalo...!!
Uss Shaakh Say Toota Howa Lamha Muje Dena..!

Tum Mera Badan Aurh Kay Phirtey Raho.....Laikin..!!
Mumkin Hoo Toa Ek Din Mera Chehra Muje Dena...!!

Chuu Jaye Hawa Jiss Say Toa Khushbo Teri Aye..!!
Jaatey Howey Eik Zakhm Toa Aisa Muje Dena...!!

Shab Bhar Ki Musafat Hay Guwahee Ki Talabgaar...!!
Ayee Subah-e-Safar, Apna Sitara Muje Dena...!!

Ek Dard ka Mela Kay Laga hay Dil-o-Jaan Mein ..!!
Ek Rooh Ki Awaaz Kay "Rasta Muje Dena"...!!

Ek Taza Ghazal Azn-e-Sukhn Maangh Rahi hay ..!!
Tum Apna Mehakta Howa Lehjaa Muje Dena..!!

Woh Mujse Kahein Bahr Kay Museebath Mein Tha Mohsin..!!
Reh Reh Kay Magar Uska Dilaasa Muje Dena..!!!...

Jo aanso dil me girtey hain wo aankhon me nahi rehte Bohet se haarf

Jo aansoo dil mein girtey hein wo aankhoon mein nahi rehte
Buhat se haarf aise hein jo lafzon mein nahi rehte

Kitaabon mein likhey jaatey hein dunya bhar kay afsaaney
Magar jin mein haqeeqat ho wo kitabon mein nahi rehte

Bahaa’r aaye to har aik phool pe saath aati hai
Hawa jin ka muqaddar ho wo shakhon mein nahi rehte

Liye phirtey hein kuch ehbaab aise muztarib lamhey
Jahan darbaar mil jaaye jabeenon mein nahi rehte

Mehek aur titlioon ka naam bhanwrey se juda kion ho
Kay yeh bhi to khizaan aaney pe phoolon mein nahi rehte

Dastaras main nahi halaat tujhe kia maloom Ab zarore hai mulaqaaat

Dastaras main nahee halaaat, tujhey kia maloom
Ab zarooree hay mulaqaaat, tujhey kia maloom

Raat kay pichlay pahar, neend shikan tanhaee
Kaisey kartee hay sawalaaat, tujhey kia maloom

Tu bazid hay kay sar e aam parastish ho taireee
Main hoon paaband e rawayaaat, tujhey kia maloom

Jashan sawan kaa yun barh charh kay mananey waley
Zulm kiaa dhaatee hay barsaaat, tujhey kia maloom

Shana e waqt pay ab zulf e pareeshaan kee tarhaa
Bikhree rahtee hay mairee raaat, tujhey kia maloom

Dar-e-Fana Main Naqsh-e-Baqa Chor Jaon Ga Main Apnay Baad Apni Sada

Dar-e-Fana Main Naqsh-e-Baqa Chor Jaon Ga
Main Apnay Baad Apni Sada Chor Jaon Ga,

Hain Or Bhi Chaman Meri Khushbo Ke Muntazir
Main Is Chaman Ko Misl-e-Saba Chor Jaon Ga,

Doonga Kai Kaliyuon Ko Payam-e-Shaguftagi
Gulshan Main Ek Husn-e-Adaa Chor Jaon Ga,

Le Jaon Ga Main Apni Wafa Ko Bhi Apnay Sath
Or Un Ke Paas Yaad-e-Wafa Chor Jaon Ga,

Jo Mere Dil Pe Zakham Lagatay Rahe Yunhi
Main Un Ke Waaste Bhi DUA Chor Jaon Ga...

Main usey kaise akela chor don is rah me sath jo chalta raha

Main usay kaise aikaila chor don is rah main
sath jo chalta raha majboriyon k baad bhi.

ban k khusboo rach gya hy yun mere ehsas main
door ho paya nahi woh dooriyon k bad bhi

rafta rafta us ko bhi ye duniya raâs aa gye
muskra k woh mila hy ranjishon k bad bhi

fasly kb kum howay hain rabton k bad bhi
ajnabi thay ajnabi hain "mohabbaton" k baad bhi

Woh Apni Sari Nafratein Mujh pe Lutata Raha Mera Dil Jisko Sada

Woh Apni Sari Nafratein Mujhpe Lutata Raha
Mera Dil Jissko Sada Muhabbatein Sikhata Raha

Uski Yaad Ka Zara Yeh Pehlu Toh Dekho
Mujhse Kiye waday Woh Kissi Aur Se Nibhata Raha

Kuch Khabar Nahi Woh Shakhs Kya Chahta Tha
Ke Taaluk Tor Kar Bhi Mujhko Aazmata Raha

Tootay Hue Taaluk Mein Bhi Kitni Mazbooti Hai
Main Jitna Bhulata Raha Woh Utna Yaad Ata Raha

Koi Zanjeer Ho Usko Mohebbat Tor sakti hai Jidhar Chahe ye Bahein

Koi Zanjeer Ho Usko Muhabbat Torr sakti hai
Jidhar Chahe ye Bagein Zindagi ki Morr Sakti hai,

Muhabbat Roak Sakti hai Kisi Girtey Sitarey Ko
Kisi Jaltey Shararey Ko , Fana Kay Shuaarey ko,

Ye Chalna Choor Aaenay Ki krichein Jorr Sakti hai
Koi Zanjeer Ho, usko Muhabbat Torr sakti hai,

Muhabbat Per kisi bhi Rasm ka Pehra nahin chalta
Kisi Aamr ,Kisi Sultan ka Sikka nahin Chalta ,

Ye her Zandaan Ki Aandhi Salakhein Torr sakti hai
Koi Zanjeer Ho Usko Muhabbat Torr Sakti hai,

Ye Jab chahe Kisi Bhi khwab ki Tabeer Mil Jaye
Kisi Rastey mein Raasta Poochti ,Taqdeer Mil jaye,

Samey kay Taiz Dharoon ko Ye pichey Chorr Sakti hai
Koi Zanjeer Ho , Uss ko Muhabbat Torr Sakti hai

Is Me Shamil Dasht-o-Sehra Aur Weranay Ki Baat Ahl-e-Mehfil Se

Is Main Shamil Dasht o Sehra Aur Weranay Ki Baat
Ahl e Mehfil Se Juda Ha TERAY dewanay Ki Baat

Mohtasib hum Gunah Garoon Ko Na Dey iLzam e Maa
Tishnagi Ma Aaa Gai Honton Pa Maay Khanay Ki Baat

Han Abhi Bholi Nahi Jor e Khizan Ki Dastan
Ahtayatan hum Nahi Kartay Bahar Anay KI Baat

Ban Gai Ha Surkhi Husn e Bahar e Jaodan
Aa Gai Zulf e Muabar Ka Bikhar Janay Ki Baat

Hur Nafs Ma Shola ZUn Hain Garmian Halat Ki
Zindagi Ha In Dino Bay Mout Mar Janay Ki Baat

Mahkada Badla Hova SAGAR Shikasta Hal Hain
Hur Haqeqat Ban Gai Ha Aaj Afsanay Ki Baat

Us Ne Kaha Kon Hai Tumhe Bohet Aziz Mai Ne Kaha Dil Pe Jis Ka

Us Ne Kaha Kon Hai Tumhay Bohat Aziz
Main Ne Kaha Dil Pay Jis Ka Ikhtiyar Hai

Us Ne Kaha Kon Sa Tofha Do Main Tumhay
Main Ne Kaha Wahi Sham Jo Abhi Tak Udhar Hai

Us Ne Kaha Khizan Main Milnay Ka Jawaz
Main Ne Kaha Qarb Ka Mutlab Bahar hai

Us Ne Kaha Sekron Gham Zindagi Main Hain
Main Ne Kaha Ghum Nahi Jub Sath Ghum Guzar Hai

Us Ne Kaha Sath Kahan Tak Nibhao Gay
Main Ne Kaha Jub Tak Yah Sanson Ki Taar hai

Hum ne Kaati Hain Teri Yaad Me Raatein Aksar Dil Se Guzri Hain

Humne Kaati Hain Teri Yaad Mein Raatein Aksar
Dil Se Guzri Hain Sitaaron Ki Baraatein Aksar

Unn Se Poocho Kabhi Chehre Bhi Pare Hain Tumne
Jo Kitaabon Ki Kiya Karte Hain Baatein Aksar

Humne Unn Tund Hawaaon Mein Jalaaye Hain Chiraagh
Jin Hawaaon Ne Ulat Di Hain Bisaatein Aksar

Aur Tho Kaun Hai Jo Mujh Ko Tasalli Deta
Haath Rakh Deti Hain Dil Par Teri Yaadein Aksar

Haal Kehna Hai Kissi Se Tho Mukhaatib Hai Koi
Kitni Dilchasp Hua Karti Hain Baatein Aksar
ایک تیری چاہت ھے
ایک میری چاہت ھے
اور ہو گا وہی
جو میری چاہت ھے
پس!!
اگر تو نے سپرد کر دیا
خود کو اس کے
جو میری چاہت ھے
تو میں بخش دوں گا
تجھے وہ بھی
جو تیری چاہت ھے
اور اگر تو نے نافرمانی کی اس کی
جو میری چاہت ھے
تو میں تھکا دوں گا تجھے اس میں
جو تیری چاہت ھے



یادوں کی رنگیں تصویریں اور اندھیرے آنکھوں میں
کھوئے خواب جہاں ڈھونڈیں ہم ایسی کوئی پناہ نہیں

Prayer for Spouses

صدقہ (جاریہ) کے چند چھوٹے چھوٹے طریقے:


صدقہ (جاریہ) کے چند چھوٹے چھوٹے طریقے:

01: اپنے کمرے کی کھڑکی میں یا چھت پر پرندوں کیلیئے پانی یا دانہ رکھیئے۔
02: اپنی مسجد میں کچھ کرسیاں رکھ دیجیئے جس پر لوگ بیٹھ کر نماز پڑھیں۔
03: سردیوں میں جرابیں/مفلر/ٹوپی گلی کے جمعدار یا ملازم کو تحفہ کر دیجیئے۔
04: گرمی میں سڑک پر کام کرنے والوں کو پانی لیکر دیدیجیئے۔
05: اپنی مسجد یا کسی اجتماع میں پانی پلانے کا انتظام کیجیئے۔
06: ایک قرآن مجید لیکر کسی کو دیدیجیئے یا مسجد میں رکھیئے۔
07: کسی معذور کو پہیوں والی کرسی لے دیجیئے۔
08: باقی کی ریزگاری ملازم کو واپس کر دیجیئے۔
09: اپنی پانی کی بوتل کا بچا پانی کسی پودے کو لگایئے۔
10: کسی غم زدہ کیلئے مسرت کا سبب بنیئے۔
11: لوگوں سے مسکرا کر پیش آئیے اور اچھی بات کیجیئے۔
12: کھانے پارسل کراتے ہوئے ایک زیادہ لے لیجیئے کسی کو صدقہ کرنے کیلئے۔
13: ہوٹل میں بچا کھانا پیک کرا کر باہر بیٹھے کسی مسکین کو دیجیئے۔
14: گلی محلے کے مریض کی عیادت کو جانا اپنے آپ پر لازم کر لیجیئے۔
15: ہسپتال جائیں تو ساتھ والے مریض کیلئے بھی کچھ لیکر جائیں۔
16: حیثیت ہے تو مناسب جگہ پر پانی کا کولر لگوائیں۔
17: حیثیت ہے تو سایہ دار جگہ یا درخت کا انتظام کرا دیجیئے۔
18: آنلائن اکاؤنٹ ہے تو کچھ پیسے رفاحی اکاؤنٹ میں بھی ڈالیئے۔
19: زندوں پر خرچ کیجیئے مردوں کے ایصال ثواب کیلئے۔
20: اپنے محلے کی مسجد کے کولر کا فلٹر تبدیل کرا دیجیئے۔
21: گلی اندھیری ہے تو ایک بلب روشن رکھ چھوڑیئے۔
22: مسجد کی ٹوپیاں گھر لا کر دھو کر واپس رکھ آئیے۔
23: مسجدوں کے گندے حمام سو دو سو دیکر کسی سے دھلوا دیجیئے۔
24: گھریلو ملازمین سے شفقت کیجیئے، ان کے تن اور سر ڈھانپیئے۔

درِ نبی پر پڑا رہوں گا پڑے ہی رہنے سے کام ہوگا

درِ نبی پر پڑا رہوں گا پڑے ہی رہنے سے کام ہوگا

کبھی تو قسمت کھلے گی میری کبھی تو میرا سلام ہوگا


خلافِ معشوق کچھ ہوا ہے نہ کوئی عاشق سے کام ہوگا
خدا بھی ہو گا اُدھر ہی اے دِل جدھر وہ عالی مقام ہوگا



کیے ہی جاؤں گا عرضِ مطلب,ملے گا جب تک نہ دل کا مطلب
نہ شامِ مطلب کی صبح ہوگی نہ یہ فسانہ تمام ہو گا

جو دل سے ہے مائلِ پیمبر یہ اُس کی پہچان ہےمقرر
کہ ہر دم اُس بے نوا کے لب پر درود ہو گا سلام ہو گا

اِسی توقع پہ جی رہا ہوں یہی تمنا جِلا رہی ہے
نگاہِ لطف و کرم نہ ہوگی تو مجھ کو جینا حرام ہو گا


آپ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم


خیمہ افلاک ایستادہ اسی نام سے ہے

نبض ہستی تپش آمادہ اسی نام سے ہے

اور میرے آقا روحی فدا صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم 
آپ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حسن مطلق کی ادا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
زینت ارض و سماء ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مظہر ذات رب العلی ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
خواجہ دو سرا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
بحر جود و سخا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ابر لطف و عطا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
خوش خصال و ادا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حسن صبر و رضا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شاہد کبریا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سرور انبیاء ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
خاتم الانبیاء ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
قبلہ انبیاء ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
کعبہ اصفیاء ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
فقر کی انتہا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سرفراز رضا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
تاجدار غناء ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شاہ والا نسب ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
بادشاہ عجم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
تاجدار عرب ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سرور ذی حشم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
بحر جود و کرم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
پاسبان حرم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شاہ ملک ارم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ساربان کرم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مہر لطف و کرم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
کان گنج نعم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
امام الامم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شفیع الامم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
امیر حرم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
فضل اتم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حسن اتم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
بندہ نواز ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
نور حجاز ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
صاحب لولاک ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سائر افلاک ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ہادی برحق ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
رہبر برحق ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شافع محشر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ساقی کوثر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
خلق کے سرور ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
نور مجسم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
نور دو عالم ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شمس الضحے ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
بدر الدجے ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
صدر العلی ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
نور الہدی ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
نجم الہدی ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
منبع الہدی ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شفیع الوری ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
خیر الوری ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
نقش خرد ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ناز احد ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شان صمد ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مہر ازل ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ماہ ابد ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
رشک ملائک ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ناز بشر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مونس انس و جاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حامی بے کساں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ہادی گمراہاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
رحمت دو جہاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سر کون و مکاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
باعث کن فکاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حاصل کن فکاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
دلبر قدسیاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مر سل مرسلاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ماورائے گماں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
پرتو حسن حق ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
والی بحر و بر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
رحمت کردگار ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
فضل پروردگار ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شاہد ذوالمنن ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
رونق انجمن ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ساقی بزم حق ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
زینت مے کدہ ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حسن جام و سبو ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
پیکر رنگ و بو ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
رہبر بے مثل ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مظہر عز و جل ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
رونق افزائے بزم رسالت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مایوسیوں میں حرف بشارت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ضمیر انساں کی بصیرت بصارت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
قائد مسلک وحدت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
دو جہاں کے لئے آیتہ رحمت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
فراز شوکت و بندگی ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
یقین و علم کی تازگی ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
کمال حق کی دلیل ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ہدایت کا مہر منیر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حبیب رب کبیر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
جلال و جمال کا مظہر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
جلال خسرواں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
جمال دلبراں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
بدر منیر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
عدیم النظیر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سید الانام ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
خیر الانام ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
نور ازل ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سرتاج رسل ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
فصیح البیاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
وحید الزماں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حقیقت کی زباں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
بے نشاں کا بین نشاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
وجہ تخلیق کون و مکاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سکوں کا ساحل بیکراں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
چارہ ساز غم نہاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
محبوب رب دوجہاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
قائد علم و عرفاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
عشق کا سرمایہ حیات ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
محبوب رب کائنات ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
قاسم الخیرات الحسنات ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
صاحب جمیع الصفات ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حسن کا معیار ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
خیر کا گلزار ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
انیس الغریبین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شفیع المذنبین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شمس العارفین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سراج السالکین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
رحمت اللعالمین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سید الثقلین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
امام القبلتین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سرور کونین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
محور کونین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
زینت کونین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
نور عین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
رحمت دارین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سید الحرمین ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
انوار یزداں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
روح ایماں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
جان ایماں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سر ایماں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حیات ایماں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
پناہ عاصیاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
وسیلہ مجرماں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مہر درخشاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
نیر تاباں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ماہ ضوفشاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
تزئین گلستاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
روح صباء ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
جان بہاراں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سید ذیشاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
سر پنہاں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
حامل قرآں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مشعل ایماں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مصحف یزداں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
فخر زمیں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مخر زماں ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
مہر ہدایت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ماہ رسالت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
زیب رسالت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
فخر رسالت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شمع رسالت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
فخر نبوت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
پیکر رحمت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
صاحب عظمت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
شان عبدیت ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
خلق کی ابتداء ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
خُلق کی انتہا ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ہر ابتدا سے اول ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
ہر انتہا سے آخر ، صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم

اور اللہ نے میرے آقا روحی فدا صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم سے فرمایا۔

''جو تجھ سے ملا ، وہ مجھ سے ملا ۔
جو تجھ سے گیا ، وہ مجھ سے گیا ۔
جس نے تجھ کو دیکھا ، اس نے مجھ کو دیکھا ۔''


Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...